crossorigin="anonymous"> این اے 157 کے ضمنی الیکشن میں پی ٹی آئی کے 50 سے زائد سابق چیئرمینوں، وائس چیئرمینوں اور کونسلرز کی پیپلزپارٹی کے امیدوار علی موسی گیلانی کی حمایت کا اعلان - societynewspk

این اے 157 کے ضمنی الیکشن میں پی ٹی آئی کے 50 سے زائد سابق چیئرمینوں، وائس چیئرمینوں اور کونسلرز کی پیپلزپارٹی کے امیدوار علی موسی گیلانی کی حمایت کا اعلان

ملتان (سوساِئٹی نیوز)

گیلانی ہاؤس میں سابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی، سید علی موسیٰ گیلانی اور معاونِ خصوصی ملک عبدالغفار ڈوگر کی موجودگی میں پی ٹی آئی کے سابق  چیئرمینوں اور وائس چیئرمینوں چوہدری جاوید اقبال آرائیں،عبدالشکور گجر، چوہدری حبیب اکرم آرائیں، رانا منور، رانا صلاح الدین، افتخار غوری، ذوالفقار بودھی اور چوہدری احمد حسن گجر،چوہدری خالد آرائیں اور چوہدری احمد گجر ودیگر نے پی ٹی آئی کو خیر آباد کہہ کر پاکستان پیپلزپارٹی میں باقاعدہ شمولیت اختیار کرنے کا اعلان کردیا،حلقہ NA157 میں سید علی موسیٰ گیلانی کو بھرپور پذیرائی حاصل ہوگئی ۔

اس ضمن میں سابق وزیراعظم و سینیٹر سید یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے کہ این اے 157سے تعلق رکھنے والے تحریک انصاف کے 50سے زائد یونین کونسلوں کے سابق چیئرمینوں، وائس چیئرمینوں اور کونسلرز نے سید علی موسی گیلانی کی حمایت کا اعلان کیا ہے جس سے علی موسی گیلانی کی پوزیشن بہتر ہوگئی ہے ۔

تحریک انصاف ملک میں سیاسی عدم استحکام پھیلانے کی کوشش کر رہی ہے۔اس وقت سیاست نہیں بلکہ سیلاب زدگان کی امداد کی اشد ضرورت ہے ۔عمران خان اور چوہدری پرویز الہی کو جنوبی پنجاب کے متاثرین سیلاب کی امداد کے لئے آناچاہیئے تھا۔ تمام وفاقی و صوبائی حکومتوں سمیت مخیر حضرات،فلاحی اداروں کو سیلاب زدگان کی مدد کے لئے بڑھ چڑھ کر کام کرنا چاہیئے۔

تحریک انصاف کے سابق چیئرمینوں، وائس چیئرمینوں، کونسلرز کی سید علی موسی گیلانی کی حمایت سے الیکشن کا فیصلہ ہو گیا ہے جنہوں نے ووٹ لینے کے بعد جب استعفے ہی دینے ہیں تو عوام کو چاہیئے کہ وہ ان کو اپنے قیمتی ووٹ سے سپورٹ کریں جو اسمبلیوں میں جاکر ان کے حقوق کی بات کریں ۔

گیلانی خاندان میں سید تنویر الحسن گیلانی، مخدوم سید یزدانی گیلانی، مخدوم سید ابوالحسن گیلانی سمیت سب میرے ساتھ ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گیلانی ہاؤس میں پی ٹی آئی کے سابق چیئرمینوں، وائس چیئرمینوں اور کونسلرز کی پیپلز پارٹی میں شمولیت اور این اے 157کی ضمنی نشست پی ڈی ایم کے امیدوار سید علی موسی گیلانی کی حمایت کے اعلان کے موقع پر پریس کانفرنس کے دوران کیا۔اس موقع پر مشیر وزیراعظم ملک عبد الغفار ڈوگر، سید علی موسی گیلانی، ملک ارشد راں بھی موجود تھے جبکہ اس موقع پر پی ٹی آئی کے 50سے زائد یونین کونسلوں کے سابق چیئرمینوں، وائس چیئرمینوں، کونسلرز چیئرمین بدھلہ سنت چوہدری جاوید اقبال آرائیں، چیئرمین چٹھہ،عبدالشکور گجر، چوہدری حبیب اکرم آرائیں، رانا منور، رانا صلاح الدین، افتخار غوری، ذوالفقار بودھی اور چوہدری احمد حسن گجر،چوہدری خالد آرائیں اور چوہدری احمد گجر ودیگر نے پی ٹی آئی چھوڑ کر پیپلز پارٹی میں شمولیت اور سید علی موسی گیلانی کی حمایت کا اعلان کیا ۔

سید یوسف رضا گیلانی نے مزید کہا کہ یہ بہت اہم الیکشن ہے جس سے ملک کے مستقبل کا فیصلہ ہوگا ہمارے مخالفین ملک میں سیاسی و معاشی عدم استحکام چاہتے ہیں جنہوں نے آئی ایم ایف کے ساتھ عوام دشمن فیصلے کئے جس کی وجہ سے آج پوری قوم شدید مشکلات کا شکار ہے ہم پارٹیاں نہیں ملک بچانا چاہتے ہیں اور ملک وقوم کے مفاد میں سخت فیصلے کر رہے ہیں تاکہ ترقی و خوشحالی کی سمت کا صیح رخ بدلے ۔

انہوں نے کہا کہ جوعمران خان کے ساتھ چلا جائے وہ ٹھیک ہے اور جو چھوڑ جائے وہ غدار ہیں اور ایسی زبان بولی جائے کہ ہم نہیں تو ملک تین ٹکڑوں میں تقسیم ہو جائے گا نیوکلیئر محفوظ نہیں رہے گا اسٹیبلشمنٹ تباہ ہو جائے گی آپ کو سب سے پہلے محب وطن ہو نا چاہیئے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ جن لوگوں کی شاہ محمود قریشی نے شمولیت کروائی وہ سابقہ انتخابات میں بھی شاہ محمود قریشی کے ساتھ رہے گیلانی خاندان کے اہم افراد ہمارے ساتھ ہیں سید علی موسی گیلانی پی ڈی ایم کے امیدوار ہیں ۔

ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ یقینا سرکاری مشینری کا کھلم کھلا استعمال کیا جارہا ہے زین قریشی پانچ پانچ ہزار روپے کے چیک دے رہے ہیں اور سرکاری ملازمین کے تبادلے اور تعیناتیاں کی جارہی ہیں اس سلسلے میں ہم نے الیکشن کمیشن آف پاکستان کو خط لکھ دیا ہے ان کو اس سلسلے میں سختی سے نوٹس لینا چاہیئے ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ عمران خان 9سیٹوں پر الیکشن لڑ رہے ہیں لیکن جب انہوں نے استعفے دے کر باہر ہی رہنا ہے تو عوام کو سمجھ لینا چاہیئے کہ ان کے ساتھ مخلص کون ہے اسی لئے وہ ان کو سپورٹ کریں جو ان کے حقوق کی آواز اسمبلیوں میں جاکر پہنچائیں اور ان کے مسائل حل ہوں لیکن مجموں اور دھرنوں سے ملکوں اور حکومتوں پر قبضہ نہیں کیاجاسکتا۔

انہوں نے کہا کہ 2010میں بھی سیلاب آیا تھااور عالمی دنیا سے سے متاثرین سیلاب کی امداد کے لئے اپیل کی گئی آج بھی وہی صورتحال ہے وفاقی و صوبائی حکومتوں، اداروں، مخیر حضرات کو سیلاب زدگان کی امداد کے لئے بڑھ چڑھ کر حصہ لینا چاہیئے اور مشکل کی اس گھڑی میں ان کا ساتھ دینا چاہیئے سندھ، کے پی کے، بلوچستان سمیت جنو بی پنجاب میں سیلاب نے جو تباہی پھیلائی ہے اس سے بڑی تعداد میں گھر کے گھر تباہ ہو گئے ہیں قیمتی جانوں، مال مویشی اور زراعت کو شدید نقصان پہنچا ہے جس کی وجہ سے آج پوری قوم انتہائی کرب سے گزر رہی ہے ایسے حالات میں ہم سب کو اپنا فریضہ بھرپور انداز میں ادا کرنا چاہیئے۔

 

سابق وزیراعظم و سینیٹر سید یوسف رضا گیلانی پی ٹی آئی کے سابق چیئرمینوں، وائس چیئرمینوں اور کونسلرز کی پیپلز پارٹی میں شمولیت اور این اے 157کی ضمنی نشست پی ڈی ایم کے امیدوار سید علی موسی گیلانی کی حمایت کے اعلان کے موقع پر پریس کانفرنس خطاب کر رہے ہیں جبکہ مشیر وزیراعظم ملک عبد الغفار ڈوگر بھی موجود ہیں

مکمل پڑھیں

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button